یوم ِ ازل سے قبل قرب ، محبت اور جلوے والی روحیں تھیں

یوم ِازل میں اللہ نےمصنوعی لذات ِدنیا اور جنت دکھائے تھےاپنی محبت اور دیدار کی بات نہیں کی تھی تو پھر اس لحاظ سے اس دنیا میں یا تو دنیا دار ہونا چاہیے تھے یا پھر جنتی ہونا چاہیے تھے یہ اللہ والے کہاں سے آ گئے؟ مزید پڑھیں

کلمہ سبقت جشن شاہی یوم مہدی کے دن متعارف ہوا

یہ دن آمدِ مہدی کا دن ہے ۔ آج سے انتالیس سال پہلے (15 رمضان 1977 ) سرکار گوھر شاہی کو مہدی کا مرتبہ عطا ہوا ۔ جو انتالیس سال پہلے رحمت کا نزول اورکرم کی بارش تھی وہ ہر پندرہ رمضان کو ہوتی رہے گی کیونکہ یہ زندہ دن ہے

جشن یونس منانے کی وجوہات

آپ کے وسیلے سے سیدنا گوھر شاہی کی جو خاص کرم نوازی ہوئی ہے اس کا ہم جتنا بھی شکر ادا کریں وہ ناکافی ہی ہو گا۔ 16 جون بھی خاص دن ہے جس دن سیدی یونس الگوھر ہمارے درمیان جلوہ گر ہوئے اور مالک الملک گوھر شاہی کے نعلین مبارک میں پناہ کا راستہ دکھایا۔

پندرہ رمضان ، یوم مہدی

رمضان کی پہلی تاریخ کو سورج گرہن اور رمضان کی پندرہ تاریخ کو چاند گرہن بھی ہوگا اور یہ دونوں واقعات اکھٹے ایک ہی رمضان کے مہینے میں پہلےکبھی نہیں ہوئے اور جب سیدنا گوھرشاہی اِس دنیا میں تشریف لائے تو ہوگیا۔

دیدارِ الہٰی کا نظام و طریقہ

دیدارِ الہٰی کا پہلا مرحلہ علم طریقت میں داخلہ ہے اور اس کے لئے کسی اہل ذکر سے رابطہ کرنا ضروری ہے جو قلب کی دھڑکنوں کو اللہ اللہ میں لگائے گا۔طریقت کی ابتداءقلب کا اللہ اللہ کرنا ہے اور طریقت کی انتہا اللہ کا دیدار کرنا ہے۔

چوری کی سزا ہاتھ کاٹنا اب موثر نہیں رہا

چوروں کے ہاتھ کاٹنے کی سزا اسلام کے اوائل کا قانون تھا، جس جگہ اسلام کا نظام قائم کیا جا رہا تھا ۔لیکن اب زمانہ بدل گیا ہے اب ہاتھ پاؤں کاٹنے والا قانون اِس دور میں خاص طور پر یورپ امریکہ، اسٹریلیاء میں لاگو نہیں ہوتا ۔